حدیث صحیح کے مراتب NafseIslam | Spreading the true teaching of Quran & Sunnah

This Article Was Read By Users ( 76 ) Times

Go To Previous Page Go To Main Articles Page



کسی حدیث کے صحیح ہونے کیلئے جن اوصاف وشرائط کاپایاجانا ضروری ہے ان کے مختلف ہونے کی وجہ سے احادیثِ صحیحہ کے مابین آپس میں بھی تفاوت ہے کیونکہ بعض احادیثِ صحیحہ میں مذکورہ اوصاف وشرائط بدرجہ اتم پائے جاتے ہیں جبکہ بعض میں کچھ کمی کے ساتھ۔چنانچہ احادیث صحیحہ کے مراتب بیان کیے جاتے ہیں۔
(۱)۔۔۔۔۔۔وہ احادیث جنہیں امام بخاری ومسلم دونوں نے اپنی صحیحین میں ذکر کیا ایسی حدیث کو متفق علیہ کہتے ہیں۔
(۲)۔۔۔۔۔۔جنہیں صرف امام بخاری نے اپنی صحیح میں روایت کیا۔
(۳)۔۔۔۔۔۔جنہیں صرف امام مسلم نے اپنی صحیح میں روایت کیا۔
(۴)۔۔۔۔۔۔وہ احادیث جو امام بخاری ومسلم کی شرائط پر ہوں لیکن انہوں نے انہیں روایت نہ کیا ہو۔
(۵)۔۔۔۔۔۔جو صرف امام بخاری کی شرائط پر ہوں ، لیکن انہوں نے انہیں روایت نہ کیا ہو۔
(۶)۔۔۔۔۔۔جو صرف امام مسلم کی شرائط پر ہوں، لیکن انہوں نے انہیں روایت نہ کیا ہو۔
(۷)۔۔۔۔۔۔جو امام بخاری کے علاوہ دیگر ائمہ مثلا(امام ابن خزیمہ وامام ابن حبان)کے نزدیک صحیح ہوں۔(۱)
-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-
1۔۔۔۔۔۔٭ کتب صحاح ستہ میں مذکورہ تمام احادیث صحیح نہیں تسمیہ بصحاح تغلیباًہے۔ (فتاوی رضویہ ۵/۴۳۹)٭مسلم و بخاری میں بھی ضعفاء کی روایات موجود ہیں۔ (فتاوی رضویہ ۵/۵۱۱)٭ ابن جوزی نے صحاح ستہ اور مسند امام احمد کی چوراسی احادیث کو موضوع کہا۔(فتاوی رضویہ ۵/۵۴۸)٭ بالفرض اگر کتب حدیث میں اصلاً پتا نہ ہوتا تاہم ایسی حدیث کا بعض کلماتِ علماء میں بلا سند مذکور ہونا بس (کافی) ہے۔(فتاوی رضویہ ۵/۵۵۵)
-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-٭-
نصاب اصول حدیث
مع
افادات رضویۃ
پیشکش
مجلس المدینۃ العلمیۃ (دعوتِ اسلامی )
(شعبہ درسی کتب)